سڑک پر اچانک سے تیزاب پھینک دیا ۔۔ سابق چیف جسٹس گلزار احمد کے ڈرائیور کا جسم جھلس گیا، اس ظلم کے بعد ان کی حالت کیسی ہے؟

سابق چیف جسٹس گلزار احمد کے ڈرائیور پر کسی نے سڑک پر تیزاب پھینک دیا۔ ہوا کچھ

یوں کہ خرم احمد نامی یہ آدمی صدر میں ایم اے جناح روڈ سے ایمپریس مارکیٹ کی جانب آ رہا تھا کہ اچانک سے کسی نے ان پر تیزاب پھینک دیا۔ جس کے بعد انہیں پورے جسم پر جلن محسوس ہونے لگی اور جسم جھلس گیا۔مذکورہ واقعے کی پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹیج

حاصل کر لی ہے جس میں واضح دیکھا جا سکتا ہے کہ خرم موٹر سائیکل پر آتے ہوئے رینبو سینٹر کے عین سامنے رک جاتا ہے۔اور وہاں موجود لوگ اس کے پاس جمع ہو جاتے ہیں، پھر وہ جسم میں جلن محسوس کرتا ہے اور اپنی قمیض اتار دیتا ہے۔ افسوسناک واقعے کے بعد

پولیس اہلکار نے اپنی مدد آپ کے تحت اسے اسپتال منتقل کیا۔مزید یہ کہ پریڈی تھانے کے ایس ایچ او سجاد کا کہنا ہے کہ خرم احمد آصف کالونی منگھوپیر روڈ کا رہائشی ہے جو سندھ سیکریٹیریٹ کے پروٹوکول ڈیپارٹمنٹ میں 14 سال سے ملازم ہے۔ اور سابق چیف جسٹس

گلزار احمد کے ڈیفنس میں واقع بنگلے پر وہ بحثیت ڈرائیور ملازمت کرتا ہے۔