اسلام آ باد ہاہیکورٹ نے توہین عدالت کا شوکاز نوٹس خارج کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) خاتون جج کے خلاف توہین آمیز الفاظ پر توہین عدالت کے کیس میں

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور سابق وزیر اعظم عمران خان بچ گئے ، عدالت نے توہین عدالت کا نوٹس ڈسچارج کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر منا للہ نے ریمارکس دیے کہ عمران خان کا بیان حلفی دیکھ لیا ، عمران خان نے نیک نیتی ثابت کی

اور خاتون جج سے معافی مانگنے گئے ، ہم عمران خان کے کنڈیکٹ سے بھی مطمئن ہیں، یہ لارجر بینچ کا متفقہ فیصلہ ہے ۔ خیال رہے کہ سابق وزیر اعظم عمران خان نے گزشتہ سماعت پر عدالت میں کہا تھا کہ اگر خاتون جج کو تکلیف پہنچی ہے توذاتی حیثیت میں معافی

مانگنے کیلئے بھی تیار ہوں۔گزشتہ سماعت پر عدالت کی جانب سے عمران خان کے معافی کے بیان کو عدالت نے تسلی بخش قرار دیا تھا۔گزشتہ سماعت جب شروع ہوئی تو عمران خان کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ عمران خان کچھ کہنا چاہتے ہیں جس پر عمران خان

روسٹرم پر آئے اور کہا کہ ” میری 26 سال کی کوشش رول آف لاء کی ہے، میرے سواء جلسوں میں رول آف لاء کی کوئی بات نہیں کرتا ، میں یقین دلاتاہوں آئندہ کبھی بھی ایسا عمل نہیں ہو گا ، میری کبھی بھی عدلیہ کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے کی نیت نہیں تھی ، اگر خاتون

جج کو تکلیف پہنچی ہے توذاتی حیثیت میں معافی مانگنے کیلئے بھی تیار ہوں ، جو میں نے کہا جان بوجھ کر نہیں کہا “۔