استغفاراللہ ،مُردے کو دفن کرتے ہی جانور آ جاتا ہے ۔۔ مردہ انسان کا گوشت کھانے والا جانور، جس نے پنجاب میں تباہی مچائی

اس دنیا میں ایسے کئی جانور ہیں جو کہ انسان کو خوف میں مبتلا کر دیتے ہیں، ایسا ہی ایک جانور ہے جو کہ مردہ انسان کو اپنی خوراک بناتا ہے۔
ہماری ویب ڈاٹ کام کی اس خبر میں آپ کو اسی حوالے سے بتائیں گے۔

بجو یا Badgers نامی یہ جانور اس لیے بھی خوفناک اور غیر معمولی ہے، کہ یہ شہری علاقوں یا ہر جگہ موجود نہیں ہوتا، خاص کر انسانی آبادی والے علاقے میں۔

یہ جانور عموما جنگلات، قبرستان، یا جنگلاتی علاقے میں رہتا ہے، اسی لیے اس کا سامنا بھی جنگلی حیات سے زیادہ ہوتا ہے۔ بجو انسان کا دشمن نہیں ہے اور نا ہی خطرناک ہے، مگر مردوں کو اپنی خوراک ضرور بناتا ہے۔

پاکستان سمیت دنیا بھر میں یہ جانور اسی حوالے سے شہرت رکھتا ہے، گوشت خور اس جانور نے 2015 میں اوکاڑہ کے ضلع رینالہ خورد کے ایک قبرستان میں بجو نامی جانور نے تباہی مچا دی۔ نوائے وقت کی رپورٹ کے مطابق اس جانور نے کئی قبروں سے مردے نکال کر انہیں اپنی خوراک بنایا، جبکہ انسانوں کو زخمی کیا۔

اگرچہ دودھ دینا والا جانور ہے لیکن اس کی بناوٹ کچھ اس طرح ہے کہ ہاتھی بھی اسے روند نہیں سکتا ہے، تیز دھار پنجے اور ناخن کی بدولت یہ مردے کو باآسانی چیڑ پھاڑ دیتا ہے، انہی ناخن کی مدد سے قبر کو بھی کھود دیتا ہے۔

بجو کی سونگھنے کی طاقت اس حد تک ہوتی ہے کہ یہ لائی گئی میت کو سونگھ کر اس کی جانب بڑھ جاتا ہے۔
صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ برطانیہ کے یارڈلی قبرستان میں بھی بجو نے کئی مُردوں کو قبر سے نکال کر شکار بنایا، جب ایک پیارے کی فیملی نے اپنے پیارے کو اس طرح دیکھا کہ وہ سوچ بھی نہیں سکتے تھے، تو حکام سے شکایت کی، جس کے بعد خبر میڈیا پر بھی آئی۔

زیادہ تر حملے ان قبروں پر کیے جاتے ہیں، جن میں میت چند ماہ پہلے ہی لائی جاتی ہے۔ کتے، نیولے، اور چوہے کا ملا جلا مکسچر، یہ جانور ان تینوں جانوروں کا آدھا آدھا حصہ معلوم ہوتا ہے۔